معلومات سیرت نبوی حصہ دوم

معلومات سیرت نبوی حصًہ دوم

١۔عرب کے بڑے بت ہبل،لات، منات اور عزیٰ تھے۔

٢۔ وفات کے وقت  رسول اللہ ﷺ کے والد حضرت عبداللہ کی عمر پچیس سال تھی۔

٣۔ حضرت ابو طالب ، حضرت  عبداللہ  کے سگے بھائی تھے۔

٤۔ حضرت آمنہؓ کا  تعلق قبیلہ بنو زہرہ سے تھا۔

٥۔ حضرت حلیمہ کا تعلق قبیلہ بنی سعد بن بکر سے تھا۔

 ٦۔ عبداللہ ، انیسہ، حزافہ یا جذامہ انہیں کا لقب شیما تھا  حضرت حلیمہ کی اولاد اور   نبی کریم ﷺ کے رضائی بہن بھائی تھے ۔

٧۔رسول اللہ ﷺ کے چچیرے بھائی ابوسفیان بن حارث آپؐ کے رضائی بھائی تھے۔

٨۔ شق صدر کا واقعہ نبی کریم ﷺ کی ولادت کے چوتھے یا پانچویں سال پیش آیا۔

٩۔ بحیرا نے کہا نبی کریمﷺ کی جان کو یہود سے خطرہ ہے۔

١٠۔پہلی وحی کےبعد  حضرت خدیجہؓ  نبی کریم ﷺکو ورقہ بن نوفل کے پاس لے کر گئیں۔

١١۔ پہلی وحی رمضان المبارک کی اکیس تاریخ کو دو شنبہ کی رات کو نازل ہوئی۔

١٢۔ نبوت کے آغاز کے وقت نبی کریم ﷺکی عمر چالیس سال تھی۔

١٣۔پہلی وحی میں سورۃ علق کی پہلی پانچ آٍیات نازل ہوئیں۔

١٤۔وحی کی8 اقسام ہیں۔

١٥۔قرآن 23 سال کے عرصہ میں نازل ہوا۔

١٦۔عہد نبوت کے تیرہ سال مکّہ میں گزرے۔

١٧۔عہد نبوت کے دس سال مکّہ میں گزرے۔

١٨۔ خواتین میں سب سے پہلے حضرت خدیجہؓ نے اسلام قبول کیا۔

١٩۔مردوں میں سب سے پہلے حضر ت ابوبکرؓ صدیق نے اسلام قبول کیا۔

٢٠۔بچوں میں سب سے پہلے حضرت علیؓ بن ابی طالب نے اسلام قبول کی

٢١۔ پس پردہ دعوت کا مرحلہ تین سالوں پو مشتمل تھا۔

٢٢۔ غلاموں میں سب سے پہلے حضرت زید بن حارثہؓ نے اسلام قبول کیا۔

٢٣۔ابتدا اسلام میں چھوٹی چھوٹی آیتیں نازل ہوتی تھیں۔

٢٤۔ ابتدا اسلام میں دو ررکعت صبح اور دورکعت شام کی نماز فرض تھی۔

٢٥۔ رسول اللہ ﷺکو وضو کرنے کا طریقہ حضرت جبریل ؑنے سکھایا۔

٢٦۔ رسول اللہ ﷺکی سب سے زیادہ مخالفت کرنے والارشتہ دار آپؐ کے چچا تھے۔

٢٧۔حضور اکرمﷺ نے کوہ صفا پر چڑھ کر  ” یا صَبَاحَاہُ ” کی آواز لگائی۔

٢٨۔ یا صَبَاحَاہُ کا مطلب ہے ہائے صبح۔

٢٩۔ نبوت سے پہلے  اہل قریش رسول اللہ ﷺکو  صادق اور امین کے لقب سے پکارتے تھے۔

٣٠۔ 4 نبوت میں پہلی بار اسلامی دعوت منظر عام پر آئی۔

٣١۔ ابو لہب نے اپنے دو بیٹوں عُتبہ اور عُتیبہ کی شادی نبی کریمﷺ کی دو صاحبزادیوں رقیّہؓ اور اُم کلثومؓ سے کی ۔

٣٢۔رسول اللہ ﷺکے دوسرے صاحبزادے کی وفات پر ابولہب نے اپنے رفقاء کو کہا کہ محمدﷺ ابتر ہو گئے ہیں۔

٣٣۔ ابولہب کی بیوی اُم جمیل تھی جس کا نام اَرویٰ تھا۔

٣٤۔ اُم جمیل حرب بن اُمیہّ کی بیٹی اور ابوسفیان کی بہن تھی۔

٣٥۔ قرآن میں ابولہب کی بیوی کو حَمّالَۃَالحَطب (لکڑیاں ڈھونے والی) کا لقب دیا گیا ہے۔

٣٦۔عقبہ بن ابی معیط نے نبی کریمﷺکی کمر پر اُونٹ کی اوجھڑی ڈالی جبکہ آپؐ سجدے کی حالت میں تھے۔

٣٧۔ ابوجہل کی کنیت ابوالحکم تھی۔

٣٨۔ حضرت بلالؓ،  اُمیہّ بن خلف کے غلام تھے۔

٣٩۔حضرت بلالؓ کو حضرت ابوبکرؓ نے خرید کر آزاد کیا۔

٤٠۔ اسلام کی پہلی شہیدہ  حضرت سُمیّہ ہیں۔

2 Comments

  1. Ameer Hamza Awan said:

    Nice Information

    April 27, 2020
    Reply
  2. Mariyam said:

    Outstanding information

    April 29, 2020
    Reply

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *